Home / اہم ترین / صحافی صدیق کپن کی درخواست ضمانت مسترد

صحافی صدیق کپن کی درخواست ضمانت مسترد

لکھنؤ:(ہرپل نیوز؍ایجنسی)5؍اگست:الہ آباد ہائی کورٹ کی لکھنؤ بنچ نے جمعرات کو صحافی صدیق کپن کی ضمانت کی درخواست مسترد کر دی، جنہیں دو سال قبل 2020 میں ہاتھرس واقعہ میں مبینہ سازش کے الزام میں غیر قانونی سرگرمیاں روک تھام ایکٹ (یو اے پی اے) کے تحت گرفتار کیا گیا تھا۔عدالت نے اس سے قبل اس معاملہ کی سماعت کرتے ہوئے گزشتہ 2 اگست کو فیصلہ محفوظ کر لیا تھا۔صدیق کپن، ملیالم نیوز پورٹل کے نمائندے اور کیرالہ یونین آف ورکنگ جرنلسٹس کی دہلی یونٹ کے سکریٹری کو اکتوبر 2020 میں تین دیگر افراد کے ساتھ گرفتار کیا گیا تھا۔ کپن اس وقت ہاتھرس ضلع میں ایک 19 سالہ دلت لڑکی کی عصمت دری اور موت کی خبر کو کور کرنے ہاتھرس جا رہے تھے ۔ ان پر الزام ہے کہ وہ مبینہ طو رپر امن و امان کو خراب کرنے ہاتھرس جا رہے تھے۔

قابل ذکر ہے کہ 14 ستمبر 2020 کو ہاتھرس ضلع کے ایک گاؤں میں ایک 19 سالہ دلت لڑکی کو چار لوگوں نے مل کر اجتماعی عصمت در ی کی تھی، جسے تشویشناک حالت میں دہلی کے صفدر جنگ اسپتال میں داخل کرایا گیا، جہاں علاج کے دوران دلت لڑکی کی موت ہوگئی تھی۔مقتولہ کی لاش کو مبینہ طور پر ضلع انتظامیہ نے آدھی رات کو مٹی کا تیل ڈال کر جلا دیاتھا۔ لڑکی کے اہل خانہ نے الزام لگایا تھا کہ ضلع انتظامیہ نے ان کی مرضی کے بغیر متاثرہ کی آخری رسومات زبردستی ادا کیں۔کپن کی ضمانت کی درخواست متھرا کی ایک عدالت نے مسترد کر دی تھی، اس کے بعد انہوں نے ہائی کورٹ سے رجوع کیاتھا،لیکن الٰہ آباد ہائی کورٹ نے بھی درخواست ضمانت مسترد کردیا ہے۔

The short URL of the present article is: http://harpal.in/bIkw1

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا. ضرورت کے خانے پر* نشان لگا دیا گیا ہے

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.