Breaking News
Home / اہم ترین / عمران حکومت میں پاکستان کی زبان تو بدل گئی لیکن زمینی حقیقت میں کوئی تبدیلی نہیں آئی : جنرل راوت کا بیان

عمران حکومت میں پاکستان کی زبان تو بدل گئی لیکن زمینی حقیقت میں کوئی تبدیلی نہیں آئی : جنرل راوت کا بیان

 نئی دہلی(ہرپل نیوز،ایجنسی)10جنوری:فوجی سربراہ جنرل بپن راوت نے جمعرات کو کہا کہ اقتدار میں تبدیلی کے بعد بھلے ہی پاکستان کی زبان بدل گئی لیکن لائن آف کنٹرول پرزمینی حقیقت میں کوئی تبدیلی نہیں آئی ہے اور فوج کسی بھی صورت حال سے نمٹنے کے لئے مورچے پر پوری طرح تیار بیٹھی ہے۔جنرل راوت نے’ فوجی ڈے‘ سے پہلے نامہ نگاروں کی کانفرنس میں سوالوں کا جواب دیتے ہوئے کہا کہ پاکستان میں عمران خان کی حکومت آنے کے بعد کافی تبدیلی آئی ہے اور ان کی باتیں اور زبان میں کافی تبدیلی دکھ رہی ہے ، لیکن جہاں تک زمینی حقیقت کا بات ہے وہ جوں کا توں برقرار ہے، اس میں تبدیلی نہیں آئی ہے۔ ابھی بھی سرحد پر بڑی تعداد میں دہشت گرد دراندازی کی کوششوں میں ہیں اور پاکستانی فوجی انہیں دراندازی کرانے اور واپس لوٹنے کےلئے فائر کوور دیتی رہتی ہے۔جس کی وجہ سے جنگ بندی کی مسلسل خلاف ورزی ہوتی رہتی ہے۔

انہوں نے کہا کہ ہندوستانی فوج ان کی فائرنگ کا جواب دیتی ہے ، جس کے نتیجے میں عام شہری بھی ہلاک ہوتے ہیں۔ فوج کی جوابی کارروائی میں یا تو دہشت گرد مارے جاتے ہیں یا دراندازی کرنے میں ناکام رہنے پر لوٹنے کی کوشش کرتے ہیں یا وہیں چھپ جاتے ہیں۔انہوں نے کہا کہ اب فوج ان کی تلاش ڈرون کے ذریعہ کر رہی ہے اور اس دوران ہمارے دو ڈرون گرائے بھی گئے ہیں ، لیکن یہ کوئی تشویش کی بات نہیں ہے۔ اچھی بات یہ ہے کہ اس کام کےلئے جانے والے جوان اب دشمن کی بارودی سرنگوں کی زد میں آنے سے بچ جاتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ فوج ہرطرح کی صورت حال سے نمٹنے کے لئے پوری طرح تیار ہے۔

پنجاب سرحد پر درانداز ی کے خدشے والی رپورٹ پر انہوں نے کہا کہ یہ آسان نہیں ہے کیونکہ وہاں سرحد پر تکنیکی باڑ لگائی گئی ہے ہے ، جس میں رڈار اور سینسروں کا استعمال کیا گیا ہے۔ سرنگ کے راستے دراندازی کے خدشات سے انہوں نے انکار نہیں کیا ، لیکن ساتھ ہی کہا ہے کہ اب اس کا پتہ لگانے کی بھی ٹیکنالوجی آگئی ہے اور اس کے استعمال کئےجانے کی ضرورت ہے۔

The short URL of the present article is: http://harpal.in/iW8O9

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا. ضرورت کے کھیتوں ک* نشان لگا دیا گیا ہے

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.