Home / اہم ترین / غازی آباد:ماب لنچنگ اور داڑھی کاٹنے کا معاملہ تعویز گنڈے کو لے کر ہوئی مارپیٹ ، پولیس کا دعویٰ.واقعہ کے تحت ٹوئٹر سمیت کئی لوگوں کیخلاف ایف آئی آ ر

غازی آباد:ماب لنچنگ اور داڑھی کاٹنے کا معاملہ تعویز گنڈے کو لے کر ہوئی مارپیٹ ، پولیس کا دعویٰ.واقعہ کے تحت ٹوئٹر سمیت کئی لوگوں کیخلاف ایف آئی آ ر

غازی آباد :(ہرپل نیوز؍ایجنسی) غازی آباد کے لونی سے متعلق حالیہ دنوں ایک ویڈیو وائرل ہوا تھا جس میں ایک معمر مسلم شخص کے ساتھ مارپیٹ کی جا رہی تھی ، اس میں اس معمر شخص نے بتایا کہ اس کی کیسے کچھ لوگوں نے پٹائی کی اور اس سے جے شری رام کے نعرے لگانے کے لئے جبر کیا گیا،اور اس کی داڑھی بھی کاٹ لی گئی۔ اس پر سماج کے ایک بڑے طبقہ نے واقعہ کی مذمت کی اور بزرگ کے ساتھ ہمدردی کی ،لیکن اب اس واقعہ میں ایک نیا موڑآگیا ہے۔

خبروں کے مطابق ضلع غازی آبادکی پولیس نے اس معاملہ کو مذہبی رنگ دینے کیخلاف ٹویٹر سمیت نو افراد کے خلاف کیس درج کیا ہے۔خبر کے مطابق لونی بارڈر تھانے میں سب انسپکٹر نے ایف آئی آ ر کرائی ہے اور آئی پی سی کی شق 153, 153A, 295A, 505, 120B اور34میں کیس درج کیا ہے۔اس مبینہ ویڈیو کے تعلق سے پولیس کا کہنا ہے کہ بزرگ کے ذریعہ دی گئی معلومات ساری غلط ہے۔ بزرگ نے انجان کیخلاف ایف آئی آ ر درج کرائی تھی،

جبکہ وہ ان کو جانتا تھا اور وہاں زبردستی نعرے لگوانے جیسی کوئی بات نہیں ہوئی تھی۔خبر کے مطابق پولیس کی جانچ میں سامنے آ یاہے کہ عبدالصمد پانچ جون کو بلند شہر سے بھیٹا ، لونی بارڈر آیا تھا جہاں سے ایک دوسرے شخص کے ساتھ مرکزی ملزم پرویش گجر کے گھر بنتھلا ، لونی گیا تھا۔

پرویش کے گھر پر کچھ وقت بعد دیگر لڑکے جن میں کلو، پولی، عادل اور مشاہد وغیرہ آگئے اور پرویش کے ساتھ مل کر اس بزرگ کی پٹائی کی۔ ان کے مطابق عبدالصمد تعویز گنڈے کا کام کرتا ہے اور اس کے دئے گئے تعویزسے ان کے خاندان پر الٹا اثر ہوا ،جس کی وجہ سے انہوں نے یہ سب کچھ کیا۔

عبدالصمد اور ر پرویش، عادل، کلو وغیر ایک دوسرے سے پہلے سے واقف تھے ،کیونکہ عبدالصمد کے ذریعہ گاؤں کے کئی لوگوں کو تعویز دیئے گئے تھے۔ واضح رہے اس معاملہ میں پرویش گجر کی گرفتاری ہو چکی ہے اور ساتھ میں عادل اور کلو کی بھی گرفتاری ہوچکی ہے باقی دیگر دو کی بھی گرفتاری جلد ہو جائے گی۔اس معاملہ کا اتر پردیش کے وزیر اعلیٰ نے فوری نوٹس لیا ہے۔

The short URL of the present article is: http://harpal.in/663Rn

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا. ضرورت کے خانے پر* نشان لگا دیا گیا ہے

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.