Home / اہم ترین / متھرا: فرقہ پرست بے لگام۔ مسجد میں مچایا ہنگامہ، امام سے ہاتھا پائی۔ لاؤڈ اسپیکر پر بھی نکالا بخار،8 کے خلاف ایف آئی آر

متھرا: فرقہ پرست بے لگام۔ مسجد میں مچایا ہنگامہ، امام سے ہاتھا پائی۔ لاؤڈ اسپیکر پر بھی نکالا بخار،8 کے خلاف ایف آئی آر

آگرہ:(ہرپل نیوز؍ایجنسی)6؍مئی:اترپردیش کے متھرا ضلع میں واقع گوردھن قصبے کی بڑا بازار مسجد میں اچانک عناصر داخل ہوئے اور امام کے ساتھ ہاتھا پائی کی اور لاؤڈ اسپیکر کے تاروں کو توڑ دیا۔ سماج دشمن عناصر کا ایک گروپ گووردھن میں متھرا کے بڑے بازار علاقے میں ایک مسجد میں داخل ہوا اور مبینہ طور پر کچھ لاؤڈ اسپیکر کو نقصان پہنچانے کے علاوہ "جے شری رام” کے نعرے لگائے واقعے کی اطلاع ملنے پر پولیس فوری طور پر موقع پر پہنچی اور صورتحال پر قابو پالیا۔

اس سلسلے میں ، مسجد کے امام سے موصولہ تحریر کی بنیاد پر 8 افراد کے خلاف مقدمہ درج کیا گیا ہے۔ پولیس ملزم کی تلاش کر رہی ہے۔ سینئر سپرنٹنڈنٹ پولیس ڈاکٹر گورو گروور نے بتایا کہ پیر کے روز اچانک نو جوانوں نے گووردھن قصبے کے بڑا بازار کے علاقے میں واقع مسجد میں داخل ہو گئے۔ احتجاج کرنے پر امام محمد الیاس سے ہاتھا پائی کی۔واقعہ کے خلاف علاقے کے لوگوں نے احتجاج کیا۔ ایس پی (دیہی) شریش چندر نے انہیں ملزموں کے خلاف سخت کارروائی کا یقین دلایا گیا ہےامام محمد الیاس کی شکایت پر پولیس نے آئی پی سی کی دفعات 295-اے (جان بوجھ کر کسی بھی طبقے کے مذہب یا مذہبی عقائد کی توہین کرکے مذہبی جذبات کو مشتعل کرنا ہے)، 323 (رضاکارانہ طور پر تکلیف پہنچانا) اور 506 (مجرمانہ دھمکی) اور لاک ڈاؤن کے احکامات کی خلاف ورزی کے تحت ایف آئی آر درج کی گئی ہے۔

محلے میں رہنے والے مسجد کے مصلی نے بتایا کہ کچھ سماج دشمن عناصر مسجد میں داخل ہوئے اور "جے شری رام” کا نعرہ لگایا۔

انہوں نے الزام لگایا کہ جب میں نے ان سے پوچھ گچھ کی تو انہوں نے کہا کہ انہیں اوپر سے حکم دیا گیا ہے کہ یہاں سے کسی اذان کی اجازت نہیں ہے۔ انہوں نے کہا کہ میں گزشتہ 65 سالوں سے یہاں رہ رہا ہوں اور میں نے اس طرح کی مذہبی مخالف سرگرمی کبھی نہیں دیکھی۔ وہ شہر کے پرامن ماحول میں خلل ڈالنا چاہتے تھے.

The short URL of the present article is: http://harpal.in/6Zj3n

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا. ضرورت کے خانے پر* نشان لگا دیا گیا ہے

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.