Home / اہم ترین / مسلم پرسنل لا کی آڑ میں بچوں کا جنسی استحصال نہیں: کیرالہ ہائی کورٹ

مسلم پرسنل لا کی آڑ میں بچوں کا جنسی استحصال نہیں: کیرالہ ہائی کورٹ

کوچی:(ہرپل نیوز؍ایجنسی)23؍نومبر: کیرالہ ہائی کورٹ نے مشاہدہ کیا ہے کہ پرسنل لا کے تحت مسلم شادی کو پروٹیکشن آف چلڈرن فرام سیکسوئل آفنسز(POCSO) ایکٹ سے خارج نہیں کیا گیا ہے، اور شادی کی آڑ میں نابالغ بچے کے ساتھ جنسی تعلقات قائم کرنا جرم بن جاتا ہے۔ عدالت نے ایک 31 سالہ شخص کو ضمانت دینے سے انکار کر دیا ہے جس پر ایک 15 سالہ نابالغ لڑکی کو مبینہ طور پر اغوا کرنے اور اسے حاملہ کرنے کا الزام ہے۔ ملزم نے دعویٰ کیا تھا کہ اس نے لڑکی سے شادی کی تھی۔ضمانت کی درخواست کو مسترد کرتے ہوئے جسٹس بیچو کورین تھامس نے اپنے فیصلے میں کہا کہ بچوں کی شادی معاشرے کے لیے ایک لعنت ہے اورپوکسو(POCSO)قانون کا مقصد شادی کی آڑ میں بچوں کے جنسی استحصال کو روکنا ہے۔

جسٹس تھامس نے 18 نومبر2022 کو جاری کردہ اپنے فیصلے میں کہا کہ میرا خیال ہے کہ مسلم پرسنل لا کے تحت مسلمانوں کے درمیان شادیپوکسوایکٹ کے دائرے سے باہر نہیں ہے۔ اگر شادی کے دو فریقوں میں سے کوئی ایک نابالغ ہے۔ شادی، قانونی حیثیت یا دیگر حقائق سے قطع نظر پوکسوایکٹ کے تحت جرائم لاگو ہوں گے۔ عدالت نے کہا کہ پوکسوایکٹ سماجی سوچ اور ترقی میں تبدیلی کے نتیجے میں نافذ کیا گیا ہے۔ کم عمری کی شادی بچے کی نشوونما کی پوری صلاحیت سے سمجھوتہ کرتی ہے۔

یہ معاشرے کی لعنت ہے۔ عدالت نے نوٹ کیا کہ استغاثہ کے مطابق لڑکی کو اس کے والدین کے علم میں لائے بغیر مغربی بنگال سے کیرالہ لایا گیا تھا۔ہائی کورٹ مغربی بنگال کے رہائشی خالد الرحمن کی طرف سے دائر ضمانت کی درخواست کی سماعت کر رہی تھی، جس نے دعویٰ کیا تھا کہ لڑکی اس کی بیوی تھی۔ جس کے ساتھ اس نے 14 مارچ 2021 کو مسلم قانون کے مطابق شادی کی۔ رحمان نے دعویٰ کیا تھا کہ ان پرپوکسوایکٹ کے تحت مقدمہ نہیں چلایا جا سکتا، کیونکہ مسلم قانون 18 سال سے کم عمر کی لڑکیوں کی شادی کی اجازت دیتا ہے۔

یہ معاملہ اس وقت سامنے آیا جب پٹھانمتھیٹا ضلع کے کاویور کے ایک اسپتال نے پولیس کو اطلاع دی جب متاثرہ لڑکی اپنے حمل کے دوران انجکشن کے لیے اسپتال گئی تھی۔ ڈاکٹر نے 31 اگست 2022 کو آدھار کارڈ سے متاثرہ کی عمر 16 سال بتانے کے بعد پولیس کو اطلاع دی۔

The short URL of the present article is: http://harpal.in/7HUSN

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا. ضرورت کے خانے پر* نشان لگا دیا گیا ہے

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.