Home / اہم ترین / مندروں، مساجد، چرچ اور گرودواروں کو چلانے کیلئے یکساں قانون ہو:سپریم کورٹ سے اپیل

مندروں، مساجد، چرچ اور گرودواروں کو چلانے کیلئے یکساں قانون ہو:سپریم کورٹ سے اپیل

نئی دہلی : (ہرپل نیوز؍ایجنسی)11؍ستمبر: سپریم کورٹ میں درخواست دائر کرتے ہوئے ملک بھر کے تمام مذہبی مقامات کے انتظام کے لیے یکساں قانون بنانے کی درخواست کی گئی ہے۔ درخواست میں کہا گیا ہے کہ ہندو، سکھ، بدھ اور جین برادریوں کو مذہبی مقامات کی دیکھ بھال اور انتظام کا وہی حق ملنا چاہیے جیسا کہ مسلمانوں، پارسیوں اور عیسائیوں کو حاصل ہے۔

درخواست میں کہا گیا ہے کہ ہندوؤں، سکھوں، جینوں اور بدھوں کے مذہبی اداروں اور مقامات کی دیکھ بھال اور انتظام ریاستی حکومت کے ہاتھ میں ہے اور جو قانون اس کے لیے بنایا گیا ہے اسے منسوخ کیا جائے کیونکہ یہ قانون آئین کی دفعات کے خلاف ہے۔

ایڈوکیٹ اشونی اپادھیائے کی طرف سے سپریم کورٹ میں دائر درخواست میں وزارت داخلہ، مرکزی حکومت کی وزارت قانون اور ملک بھر کی تمام ریاستوں کو مدعاعلیہ بنایا گیا ہے۔ درخواست میں کہا گیا ہے کہ موجودہ قانون کے مطابق ریاستی حکومتیں ہندوؤں، سکھوں، جینوں اور بدھوں کے مذہبی مقامات کو کنٹرول کرتی ہیں۔

اس کے لیے انگریزوں نے سب سے پہلے 1863 میں قانون بنایا اور اس کے تحت ہندوؤں، سکھوں، جینوں اور بدھوں کے مذہبی مقامات بشمول مندروں، مٹھوں کا کنٹرول حکومت کے ہاتھ میں دیا گیا۔

The short URL of the present article is: http://harpal.in/zloep

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا. ضرورت کے خانے پر* نشان لگا دیا گیا ہے

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.