Home / اہم ترین / منگلورو سے زیرو ٹرافک کے درمیان صرف چار گھنٹوں میں بنگلورو اسپتال پہنچے نوزائیدہ کا کا میاب آپریشن

منگلورو سے زیرو ٹرافک کے درمیان صرف چار گھنٹوں میں بنگلورو اسپتال پہنچے نوزائیدہ کا کا میاب آپریشن

بنگلورو (ہرپل نیوز؍ ایجنسی)10 فروری: منگلورو کے ایک انسان دوست ڈرائیور محمد حنیف نے ایک40 روزہ مریض بچہ کو منگلورو تا بنگلورو بذریعہ ایمبولنس صرف چار گھنٹوں میں زیرو ٹرافک کے درمیان جئے دیوا اسپتال پہنچا یا تھا۔ جئے دیوا اسپتال کے ڈاکٹروں کی ٹیم نے کامیاب اوپن ہارٹ سرجری کے ذریعہ اس ننھے بچے سیف الزمان کو نئی زندگی عطا کردی ہے۔ 40 روزہ سیف کاعلاج جئے دیوا اسپتال کے ڈاکٹر جینت کمار کی قیادت میں ڈاکٹر آنند اور دیگر 10  ڈاکٹروں کی ٹیم نے کیا ہے۔ اس بچہ کو مزید 3 تا 4 دن تک آئی سی یو میں رکھا جائے گا جس کے بعد ڈاکٹر س اس بچہ کو پوری طرح سے خطرہ سے باہر قرار دینے والے ہیں۔

 ڈاکٹروں کی ٹیم نے بتایا کہ اس بچہ کے آپریشن اور علاج کے لئے جملہ 2 لاکھ 50 ہزار کا خرچ آیا ہے، جس میں ایک لاکھ کی رقم اس بچہ کے والدین کے بی پی ایل کارڈ کے ذریعہ حکومت سے حاصل کی گئی ہے۔ بقیہ ڈیڑ ھ لاکھ کا خرچ جئے دیوا اسپتال کے انتظامیہ نے ہی خود برداشت کیا۔ ڈاکٹر منجوناتھ پر ساد نے بتایا کہ فی الحال اسپتال کے اس بچہ کے والدین سے دیڑھ لاکھ کی رقم کا مطالبہ نہ کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔یادر ہے کہ جمعرات کے دن منگلورو کے اسپتال کے ڈاکٹر کی ہدایت پر اس 40 روزہ بیمار بچہ کو ایمبولینس کے ذریعہ زیرو ٹرافک فراہم کر کے منگلورو سے بنگلورو کے جئے دیوا اسپتال لا گیا تھا اور اس بچہ کی جان بچانے ایمولینس ڈرائیور حنیف نے  منگلورو تا بنگلورو یہ فاصلہ صرف 4 گھنٹے 32 منٹ میں طے کر کے اس بچہ کو جئے دیوا اسپتال پہنچایا تھا۔ بے بی سیف الزماں بیلگنڈی تعلقہ اُجرے کے ایک غریب کا  بیٹا ہے۔ اس بچہ کاآپریشن کامیاب ہونے پر جئے دیوا اسپتال میں ڈاکٹروں اور اسپتال کے عملہ نے ڈرائیور حنیف کو میسورو کی پگڑی پہنا کر تحائف پیش کر کے اس کی عزت افزائی کی گئی۔

The short URL of the present article is: http://harpal.in/GDUva

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا. ضرورت کے خانے پر* نشان لگا دیا گیا ہے

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.