Home / اہم ترین / مہاراشٹر میں سیاسی گھمسان۔ بی جے پی ،شیوسینا کے اختلافات طشت از بام ۔وزیر اعلی کے عہدہ سے دیویندر فڑنویس مستعفی۔فڑنویس اور ادھو ٹھاکرے میں الزامات اور جوابی الزامات کا سلسلہ جاری ۔ حکومت سازی پر تعطل ہنوزبرقرار

مہاراشٹر میں سیاسی گھمسان۔ بی جے پی ،شیوسینا کے اختلافات طشت از بام ۔وزیر اعلی کے عہدہ سے دیویندر فڑنویس مستعفی۔فڑنویس اور ادھو ٹھاکرے میں الزامات اور جوابی الزامات کا سلسلہ جاری ۔ حکومت سازی پر تعطل ہنوزبرقرار

ممبئی( ہرپل نیوز، ایجنسی) 9 نومبر: مہاراشٹر اسمبلی انتخابات کے نتائج آئے دو ہفتوں کو وقت گزرچکا ہے ، لیکن ابھی تک ریاست میں حکومت کی تشکیل نہیں ہوپائی ہے ۔ بی جے پی اور شیو سینا میں جاری گھمسان کے درمیان جمعہ کو دیویندر فڑنویس نے راج بھون میں گورنر سے ملاقات کی اور وزیر اعلی کے عہدہ سے استعفی دیدیا ۔ استعفی کے بعد فڑنویس نے عوام کا شکریہ ادا کیا کہ انہیں پانچ سال تک حکومت چلانے کا موقع ملا ۔ ساتھ ہی ساتھ انہوں نے وزیر اعظم مودی اور وزیر داخلہ امت شاہ کا بھی شکریہ ادا کیا ۔اس موقع پر دیویندر فڑنویس نے کہا کہ بی جے پی اور شیو سینا کے درمیان 50-50 کا کوئی فارمولہ طے نہیں پایا تھا ۔ انہوں نے کہا کہ شیو سینا نے بی جے پی کے ساتھ رابطہ کرنا بند کردیا اور اس کی جگہ پر این سی پی اور کانگریس کے ساتھ بات چیت شروع کردی ۔ انہوں نے کہا کہ اودھو ٹھاکرے نے میری کال کا جواب نہیں دیا ۔ادھر کانگریس نے بی جے پی پر الزام لگایا ہے کہ کچھ لیڈروں نے کانگریس کے ممبران اسمبلی کو توڑنے کیلئے 25 کروڑ کا آفر دیا ہے ۔ ہارس ٹریڈنگ کے ڈر سے کانگریس نے اپنے ممبران اسمبی کو ممبئی سے جے پور منتقل کردیا ہے ۔ سبھی کانگریس ممبران اسمبلی کو جے پور کے ایک ریسورٹ میں ٹھہرایا گیا ہے ۔

اسی درمیان کچھ ایسی خبریں بھی آرہی ہیں کہ بی جے پی کے مرکزی وزیر نتن گڈکری آج شیو سینا سربراہ اودھو ٹھاکرے سے ملاقات کرسکتے ہیں ۔ تاہم شیو سینا کے لیڈر سنجے راوت نے واضح طور پر کہہ دیا ہے کہ اگر بی جے پی وزیر اعلی کا عہدہ دینے کیلئے تیار ہے ، تو ملاقات کیلئے آئے ۔ خبروں کے مطابق شیو سینا اور بی جے پی کے درمیان ابھی کسی بھی طرح کی بات چیت نہیں ہوئی ہے ۔ ادھر مہاراشٹر کی بدلتی سیاست پر گورنر مسلسل نظریں بنائے ہوئے ہیں۔مہاراشٹر کی سیاست میں بی جے پی اور شیو سینا کے درمیان تلخی اب کھل کر سامنے آگئی ہے ۔ دیویندر فڑنویس کے الزامات پر جواب دیتے ہوئے شیو سینا کے سربراہ ادھو ٹھاکرے نے کہا کہ ہم بی جے پی جیسے نہیں ہیں ، جو وعدہ کرتے ہیں ، اس کو نبھاتے ہیں ۔ بی جے پی نے صرف پانچ سال سیاست کی ۔ میں نے امت شاہ سے وزیر اعلی کے عہدہ کو لے کر واضح بات کی تھی ۔ ہم نائب وزیر اعلی کیلئے تیار نہیں تھے ۔

جمعہ کو پریس کانفرنس کرتے ہوئے شیو سینا سربراہ نے کہا کہ ہم کبھی اپنے وعدہ سے پیچھے نہیں ہٹتے ہیں ۔ بی جے پی نے ترقی کی جگہ صرف سیاست کی ۔ انہوں نے بال ٹھاکرے کے بچوں کو جھوٹا کہا ۔ ادھو ٹھاکرے نے کہا کہ الیکشن سے پہلے بی جے پی نے میٹھی میٹھی باتیں کیں ۔ اب ہم بی جے پی کے جھانسہ میں نہیں آئیں گے ، ہم برابری چاہتے تھے ، میں اب بھی انہیں دشمن نہیں مانتا ، ہمیں وزیر اعلی بنانے کیلئے فڑنویس کی ضرورت نہیں ہے ۔ادھو ٹھاکرے نے کہا کہ مجھے دیویندر فڑنویس سے ایسے الزامات کی امید نہیں تھی ۔ ہم نے دیویندر فڑنویس کی وجہ سے ہی اتحاد جاری رکھا تھا ۔ انہوں نے پانچ سالوں کے کاموں کا سہرا اپنے سر ہی باندھ لیا ، ہم حکومت میں برابری چاہتے تھے ، نائب وزیر اعلی عہدہ ہمیں منظور نہیں تھا ۔

خیال رہے کہ اس سے پہلے جمعہ کو دیویندر فڑنویس نے راج بھون میں گورنر سے ملاقات کرکے وزیر اعلی کے عہدہ سے اپنا استعفی دیدیا ۔ استعفی کے بعد نامہ نگاروں سے بات چیت کرتے ہوئے فڑنویس نے کہا کہ عوام نے لوک سبھا میں ہمیں بڑی کامیابی دی ۔ اسمبلی انتخابات میں اتحاد کے طور پر ہم لوگوں کے درمیان گئے ، ہمارے اتحاد کو واضح اکثریت ملی اور بی جے پی سب سے بڑی پارٹی بن کر ابھری ۔انہوں نے کہا کہ کئی معاملات پر تبادلہ خیال کیلئے میں نے ادھو ٹھاکرے کو فون کیا تھا ، لیکن انہوں نے میرا فون نہیں اٹھایا ۔ بی جے پی اور شیو سینا کے درمیان کبھی بھی وزیر اعلی کے عہدہ کو لے کر 50-50 کے فارمولہ پر فیصلہ نہیں ہوا تھا ۔ میں نے پارٹی صدر امت شاہ اور سینئر لیڈر نتن گڈکری سے بھی اس سلسلہ میں بات کی ، لیکن انہوں نے بھی وزیر اعلی کے عہدہ پر 50-50 فارمولہ پر کسی بھی طرح کے فیصلہ سے انکار کیا ۔

The short URL of the present article is: http://harpal.in/JSCSH

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا. ضرورت کے خانے پر* نشان لگا دیا گیا ہے

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.