Home / اہم ترین / واٹس ایپ کےذریعے کروڑپتی بننے کا آفر۔ کپواڑہ کا ایک خاندان بنا کنگال۔

واٹس ایپ کےذریعے کروڑپتی بننے کا آفر۔ کپواڑہ کا ایک خاندان بنا کنگال۔

کپواڑہ (ہرپل نیوز، ایجنسی) جون17: کپواڑہ کے ایک مضافاتی علاقے گوس میں سادہ لوح شہری کو واٹس ایپ کال پر کروڑ پتی بننے کا آفر دیکرایک خاندان کو کنگال بنا دیا گیا ہے۔ کپواڑہ سے تین کلو میئر کی دوری پر واقع گوس علاقے میں ایک ایسا واقعہ پیش آیا ہے جو کافی افسوسناک اور سبق آموز بھی ہے۔ عبدالمجید کے دسویں جماعت میں زیر تعلیم بیٹے رفیق کو واٹس ایپ کے ذریعے ایک مسیج موصول ہوا۔ اس میں اسے کون بنے گا کروڑ پتی کے نام پر کروڑ پتی بننے کا لالچ دیا گیا ۔اسکے لئے پہلے مرحلے پر اس سے سولہ ہزار کی رقم طلب کی گئی ۔ لالچ میں آکر رفیق نے کسی کو کانوں کان خبر نہ ہونے دی اور یہ رقم دئے گئے اکاونٹ میں ڈال دی ۔ اسکے بعد وہ رقومات مانگتے گئے اور رفیق جمع کرتا گیا۔

لالچ میں اندھا ہوئے اور راتوں رات کروڑ پتی بننے کے خواب دیکھ رہے رفیق کی ضد کے آگے اسکے والد بھی ہار گئے۔ یوں وہ ایک ایک کرکے اپنی ہر چیز بیچتا رہا ۔ پانچ کنال اراضی ،ذاتی رہائشی مکان اور بیٹی کی شادی کی بیس ہزار کی رقم بھی اسی کی نذر ہوگئی ۔ متاثرین کا کہنا ہے کہ اب کال کرنے والے انہیں پیسے دینے سے صاف انکار کررہے ہیں ۔کُل ملا کر بائیس لاکھ سے زیادہ کی رقم متاثرہ نے جمع کردی تھی ۔ گزشتہ روز جب اس سے مزید رقم کا مطالبہ کیا گیا تو وہ پھٹ پڑا اور خود کشی کا ارادہ کر لیا ۔ایک ہمسائیہ کو اس کی بھنک لگ گئی ۔ یوں یہ پورا معاملہ منظر عام پر آگیا ۔ کروڑ پتی بننے کی لالچ میں یہ پورا کنبہ اب سڑک پر آگیا ہے ۔ ان کے گھر میں دو معذور بچیوں سمیت پانچ دیگر بچے بھی اپنے بڑے بھائی کی لالچ کا شکار ہوگیے ہیں۔ عبدالمجید اپنی غلطی اور بغیر سوچے سمجھے اپنے بیٹے کی ضد کے آگے جھکتے رہنے پراب خون کے آنسو رو رہا ہے۔امید کی جاسکتی ہے کہ ضلع انتظامیہ ،پولیس اور دیگر متعلقین اس معاملہ کا سنجیدہ نوٹس لیتے ہوئے ملوث افراد کو بے نقاب کریں گے ۔ ادھر یہ واقعہ دیگر لوگوں کے لئے بھی سبق آموز ہے کہ وہ اس طرح کی کسی بھی کال یا مسیج کا پوری جانچ پڑتال کے بغیر بھروسہ نہ کریں ۔۔ نیوز18 کے لئے یحییٰ سلطان کی رپورٹ


The short URL of the present article is: http://harpal.in/r4akp

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا. ضرورت کے خانے پر* نشان لگا دیا گیا ہے

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.