Home / اہم ترین / اسی کروڑ لوگوں کو نومبر تک مفت ویکسینیشن کا ہدف۔ قوم سے خطاب میں پی ایم‌ مودی کا‌اعلان

اسی کروڑ لوگوں کو نومبر تک مفت ویکسینیشن کا ہدف۔ قوم سے خطاب میں پی ایم‌ مودی کا‌اعلان

نئی دہلی: (ہرپل نیوز؍ایجنسی) 8؍جون:۔ وزیر اعظم نریندر مودی نے پیر کو کہاہے کہ اب ریاستوں کو 18 سے 44 سال کی عمر کے لوگوں کے لیے اگلے دو ہفتوں میں ویکسین مفت فراہم کی جائے گی ۔ اس سے متعلق ہدایات طے کی جائیں گی۔ملک سے اپنے خطاب میں انہوں نے یہ بھی کہاہے کہ 21 جون سے ملک بھر میں سب کے لیے مفت ویکسینیشن شروع ہونے کی امید ہے۔

بہارالیکشن میں بی جے پی نے مفت ویکسین کاوعدہ کیاتھالیکن بیشترجگہوں پر18+کے لیے ویکسین ہی نہیں ہے یاپرائیوٹ اسپتالوں میں پیسے دینے پڑرہے ہیں ۔دہلی میں بھی لوگ پیسے دے کرویکسین لے رہے ہیں۔حزب اختلاف کی حکمرانی والی ریاستوں کے وزرائے اعلیٰ کے بیانات کے بالواسطہ حوالہ دیتے ہوئے مودی نے یہ بھی کہاہے کہ ویکسینیشن سے متعلق سیاسی جواز نہیں ہے۔انہوں نے یہ بھی کہاہے کہ پردھان منتری غریب کلیان یوجنا کے تحت ، دیوالی تک غریب خاندانوں کو مفت اشیا فراہم کی جائیں گی۔

وزیر اعظم نے ریاستوں کو 18 سے 44 سال کی عمر کے لوگوں تک بھی مفت بنانے کا اعلان ایک ایسے وقت میں کیا ہے جب حالیہ مہینوں میں دہلی اور پنجاب سمیت حزب اختلاف کے زیر اقتدار متعدد ریاستوں کی حکومتوں نے ویکسین کی قلت کی اطلاع دی ہے اور لیکن ویکسین کی خریداری میں دشواریوں کا معاملہ کئی بار اٹھایا گیا تھا۔مودی نے کہا ہے کہ آج یہ فیصلہ کیا گیا ہے کہ ریاستوں کے ساتھ ویکسینیشن سے متعلق 25 فیصد کام کی حکومت بھی ذمہ داری نبھائے گی۔

اس انتظام کو آئندہ 2 ہفتوں میں لاگو کیا جائے گا۔ ان دو ہفتوں میں مرکزی اور ریاستی حکومتیں مل کر نئی ہدایات کے مطابق ضروری تیاری کریں گی۔وزیر اعظم نے کہاہے کہ توقع ہے کہ 21 جون سے مرکزی حکومت ریاستی حکومتوں کو 18 سال سے زیادہ عمر کے لوگوں کو مفت ویکسین دے گی۔ کسی بھی ریاستی حکومت کو ویکسین پر کچھ خرچ نہیں کرنا پڑے گا۔

انہوں نے اعلان کیاہے کہ ملک میں کی جانے والی 25 فیصد ویکسین براہ راست نجی شعبے کے اسپتال لے سکتے ہیں ، یہ نظام جاری رہے گا۔نجی اسپتال ویکسین کی مقررہ قیمت کے بعد ایک خوراک کے لیے زیادہ سے زیادہ 150 روپے فیس وصول کرسکیں گے۔ اس کی نگرانی کا کام ریاستی حکومتوں کے پاس رہے گا۔جب کہ دہلی میں 1200سے 1600تک پیسے لگ رہے ہیں۔

اب تک سب کچھ حکومت نے ریاست پرچھوڑدیاتھا۔لاک ڈائون سے لے کرویکسین خریداری سب ریاست پرلگادی گئی ۔وزیر اعظم نے لوگوں سے ویکسینیشن سے متعلق افواہوں سے پرہیز کرنے اور ویکسینیشن کے بارے میں شعور اجاگر کرنے میں مدد کرنے کا مطالبہ کیا۔لیکن انھوں نے رام دیوکے بیان پرکچھ نہیں کہاجنھوں نے ویکسین نہ لینے کاکھلے عام اعلان کیاہے اوراس سے لوگ افواہ کے شکار ہورہے ہیں۔ملک سے اپنے خطاب میں مودی نے یہ بھی کہا کہ ملک میں حفاظتی ٹیکوں کی کوریج 2014 میں 60 فیصد تھی ، لیکن ان کے آخری پانچ چھ سالوں میں اس میں 90 فیصد اضافہ کیا گیا۔

انہوں نے کہا ہے کہ ہندوستانیوں کی لڑائی کورونا کی دوسری لہر کے ساتھ جاری ہے۔ دوسرے بہت سے ممالک کی طرح ہندوستان کو بھی بہت تکلیف ہوئی ہے۔ان کے بقول ملک میں صحت کا ایک نیا بنیادی ڈھانچہ تشکیل دیا گیا۔

آکسیجن کی طلب میں اپریل اور مئی میں ناقابل تصور اضافہ ہوا تھا۔ ہندوستان کی تاریخ میں کبھی بھی میڈیکل آکسیجن کی ضرورت کو اتنا محسوس نہیں کیا گیا تھا۔ حکومت کے تمام طریقہ کار اس ضرورت کو پورا کرنے کے لیے مصروف تھے۔

وزیر اعظم مودی کا اعلان 80 کروڑ لوگوں کو نومبر تک ملے گامفت راشن

وزیر اعظم نریندر مودی نے کورونا مدت کے دوران آج نویں بار قوم سے خطاب کیا۔ اس دوران انہوں نے غریب عوام کے لئے ایک بڑا اعلان کرتے ہوئے کہا کہ ملک کے 80 کروڑ غریبوں کو اب غریب کلیان انا یوجنا کے تحت نومبر تک مفت اناج دیا جائے گا۔پی ایم مودی نے کہا کہ آج حکومت نے فیصلہ کیا ہے کہ پردھان منتری غریب کلیان انا یوجنا کو اب دیپاولی تک آگے بڑھایا جائے گا۔

وبائی مرض کے اس دور میں، حکومت غریبوں کی ہر ضرورت کے ساتھ ان کے ساتھی کی حیثیت سے کھڑی ہے۔ نومبر تک80 کروڑوں سے زائد شہریوں کو ہر ماہ مقررہ مقدار میں مفت اناج دستیاب ہوں گے۔پی ایم مودی نے کہا کہ پچھلے سال جب کورونا کی وجہ سے لاک ڈاؤن لگانا پڑا تھا تو پردھان منتری کلیان انا یوجنا کے تحت 8 ماہ کے لئے 80 کروڑ سے زیادہ عوام کے لئے مفت راشن کا انتظام کیا گیا تھا۔

The short URL of the present article is: http://harpal.in/up2oZ

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا. ضرورت کے خانے پر* نشان لگا دیا گیا ہے

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.