Home / اہم ترین / کیا گلبرگہ کے خانگی اور سرکاری دواخانوں کی غفلت کے سبب ہوئی اس 38سالہ شخص کی موت؟ یہاں جانئے حقیقت

کیا گلبرگہ کے خانگی اور سرکاری دواخانوں کی غفلت کے سبب ہوئی اس 38سالہ شخص کی موت؟ یہاں جانئے حقیقت

گلبرگہ(ہرپل نیوز، حکیم شاکر) یکم اگست: شہر گلبرگہ میں اکبر باغ کا ساکن ایک 38سالہ شخص محمد ایوب کی مقامی خانگی ہسپتالوں اور سرکاری ہسپتالوں کے انتظامیوں کی جانب سے نظر انداز کردئے جانے اور کسی بھی ہسپتال میں شرکت کی اجازت نہ ملنے کے سبب اموت ہونے کا گھر والوں نے الزام لگایا ہے ۔ بتایا گیا ہے کہ اس کے افراد خاندان نے کم ازم کم جمعرات کی صبح شہر میں پانچ تا چھ ہسپتالوں کے چکر لگائے۔ لیکن تمام ہسپتال کے انتظامیوں نے اس مریض کو شریک کرنے سے انکار کردیا۔ اس مریض کا کرونا کا ٹیسٹ نگیٹیو نکلا ہے۔گھر والوں کا کہنا ہے کہ  تمام ہسپتالوں نے اس مریض کو یہ کہتے ہوئےداخلہ نہیں دیا کہ اس ہسپتال میں بستر نہیں ہے یا پھر یا ICU کا انتظام نہیں ہے۔ چند سماجی کارکنان اس شخص کے مردہ جسم کولے کردفتر ڈپٹی کمشنر پہنچے تھے۔ لیکن مہلوک کے روثا نے دفتر کے ملازمین پر الزام لگایا کہ انھیں واپس بھیج دیاگیا۔ محکمہ پولیس نے اس شخص کی لاش اس کے گھر کو روانہ کردیا۔ مختلف سماجی تنظیموں نے مطالبہ کیا ہے اس شخص کی موت کے ضمن میں تحقیقات کروائی جائیں ۔

کرونا سے زیادہ متاثرہ علاقہ حیدر آبادکرناٹک کے چار اضلاع گلبرگہ، بیدر، یادگیر اور رائچور میں جمعرات کے دن مجموعی طور پر کرونا کے 513نئے مریضوں کی شناخت کرلی گئی ہے۔ جب کہ 382کرونا کے مریض صحت یاب ہونے کے بعد ڈسچارج بھی کردئے گئے ہیں۔ تاحال گلبرگہ میں کرونا متاثرین کی تعداد 5.000کو پار کرگئی ہے

The short URL of the present article is: http://harpal.in/UP9FI

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا. ضرورت کے خانے پر* نشان لگا دیا گیا ہے

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.