Home / اہم ترین / کیرالہ کے بعد تمل ناڈو کے کوئمبٹور میں ’نپاہ‘ وائرس سے متأثر مریض کی تصدیق

کیرالہ کے بعد تمل ناڈو کے کوئمبٹور میں ’نپاہ‘ وائرس سے متأثر مریض کی تصدیق

کوئمبٹور: (ہرپل نیوز؍ایجنسی)7؍ستمبر: جنوبی ہندوستان کی ریاستوں میں کرونا کے بعد اب نپاہ وائرس کے حملے کا خطرہ ہے۔ نپاہ وائرس Nipah-virus جنوبی ریاستوں کے لیے ایک نیا بحران پیدا کر سکتا ہے۔ اتوار کو کیرالہ میں نپاہ وائرس کا کیس سامنے آنے کے بعد اب تمل ناڈو کے کوئمبٹور میں ایک کیس کی نشاندہی ہوئی ہے۔ اتوار کو کیرالہ میں ایک 12 سالہ بچہ نپاہ وائرس سے متاثر ہونے کے بعد فوت کرگیا۔

کوئمبٹور میں نپاہ کی تصدیق کے بعد ضلع مجسٹریٹ نے کہا کہ ضلع میں نپاہ وائرس کے ایک کیس کی نشاندہی ہوئی ہے۔ ہم وائرس کو پھیلنے سے روکنے کے لیے تمام احتیاطی تدابیر اختیار کر رہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ تیز بخار میں مبتلا کوئی بھی مریض جو ڈسٹرکٹ ہسپتال میں آتا ہے، اس کا تفصیلی معائنہ کیا جائے گا۔

نپاہ وائرس عام طور پر جانوروں سے منتقل ہوتا ہے لیکن یہ وائرس انسان سے انسان میں بھی منتقل ہورہا ہے۔ اس وائرس کا پہلا کیس کیرالہ میں رپورٹ ہوا ، جس کے بعد ریاستی حکومت نے احتیاطی تدابیر اختیار کرنا شروع کردی ہیں۔ خیال رہے کہ کیرالہ کو فی الحال دوہرے انفیکشن کا سامنا ہے۔ ریاست پہلے ہی کرونا کی تباہی سے نبردآزما ہے ۔

اب نپاہ وائرس نے ایک اور بحران پیدا کر دیا ہے۔نپاہ وائرس کی تصدیق کے بعد مرکزی حکومت نے ایک تحقیقاتی ٹیم کیرالہ بھیجی ہے۔ کیرالہ پہنچنے کے بعد ٹیم وائرس سے مرنے والے لڑکے کے گھر پہنچ کر تحقیقات کی۔ تحقیقاتی ٹیم نے قریبی علاقہ سے رام بوٹن پھلوں کے نمونے بھی اکٹھے کیے ،کیونکہ یہ خدشہ ہے کہ لڑکا اس پھل کو کھانے کے بعد ہی وائرس سے متاثر ہوا تھا۔

The short URL of the present article is: http://harpal.in/W4ZFd

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا. ضرورت کے خانے پر* نشان لگا دیا گیا ہے

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.