Home / اہم ترین / یوپی:راشن کارڈ سرینڈرکرنے کے لئے امنڈی بھیڑ.

یوپی:راشن کارڈ سرینڈرکرنے کے لئے امنڈی بھیڑ.

غازی آباد:(ہرپل نیوز؍ایجنسی)24؍مئی:اہلیت کی سرکاری شرائط پر پورا نہ اترنے والوں سے مفت راشن کی وصولی کے حکم نامے کا ایسا خوف پیدا ہو گیا ہے کہ راشن کارڈ سرنڈر کرنے کا مقابلہ شروع ہو گیا ہے۔ غازی آباد میں صرف 15 دنوں کے اندر 6500 لوگوں نے کارڈ جمع کرایا ہے۔ 9 مئی کو ڈسٹرکٹ سپلائی آفیسر کے حکم میں گندم 24 روپے فی کلو اور چاول 32 روپے کے حساب سے وصول کرنے کو کہا گیا تھا جس کی وجہ سے لوگوں میں راشن کارڈ واپس کرنے کا مقابلہ ہوا۔کل پیر کو 250 لوگ راشن کارڈ جمع کرانے کے لیے ڈسٹرکٹ سپلائی آفس پہنچے۔جن لوگوں نے راشن کارڈ واپس کیاوہ کچھ اس طرح ہیں۔ کھوڑا 110، مودی نگر 3600 رضا پور 600 ڈاسنا 1600، لونی 60۔راشن کارڈ کے لیے نا اہل خاندان سات دن میں راشن کارڈ حوالے کر دیں، بصورت دیگر چونکہ خاندان اناج لے رہا ہے، اس کے لئے قانونی کاروائی بھی کی جائے گی۔ 21 مئی کو کہا گیا کہ ترمیم شدہ مینڈیٹ کے تحت ہی کاروائی کی جائے گی۔

اس میں ریکوری کا کوئی بندوبست نہیں ہے، جو لوگ تصدیق کے دوران نااہل پائے گئے، ان کے راشن کارڈ منسوخ کر دیے جائیں گے۔مہم چلا کر تصدیق کی جائے گی۔ انکم ٹیکس ادا کرنے والا، گھر میں اے سی، فور وہیلر، ٹریکٹر یا ہارویسٹر، ایک سے زیادہ اسلحہ لائسنس، پانچ ایکڑ سے زیادہ کھیتی کی اراضی، پانچ کے وی اے یا اس سے زیادہ صلاحیت کا جنریٹر رکھنے والا، گائوں کے خاندان کی سالانہ آمدنی دو لاکھ۔ ،جب کہ شہر میں تین لاکھ ہیں ہوتووہ سرکاری راشن نہیں لے سکتا ہے۔ کانگریس نے مفت راشن اسکیم کا فائدہ اٹھانے والے غیر مجاز لوگوں سے اس کی وصولی کے لیے جاری کیے گئے مبینہ مینڈیٹ پر سخت ردعمل ظاہر کرتے ہوئے ریاستی حکومت سے اس پر وائٹ پیپر جاری کرنے کا مطالبہ کیا ہے اور کہا ہے کہ وہ پیر سے اسمبلی میں آواز اٹھائے گی۔ بجٹ اجلاس میں یہ معاملہ بھرپور طریقے سے اٹھایا گیا۔

کانگریس لیجسلیچر پارٹی کی لیڈر آرادھنا مشرا نے الزام لگایا ہے کہ انتخابی فائدے کے لیے بی جے پی حکومت نے مفت راشن کے نام پر غریبوں کو دھوکہ دیا ہے جس کی دوسری مثال نہیں مل سکتی۔انہوں نے کہا کہ پارٹی اس مسئلہ کو اسمبلی میں بھرپور طریقے سے اٹھائے گی۔ اس معاملے پر حکومت سے ایک وائٹ پیپر جاری کرنے کا مطالبہ کرتے ہوئے، انہوں نے کہا کہ اس ‘مینڈیٹ’ نے ایک بار پھر بی جے پی کی اصل رفتار، کردار اور چہرے کو بے نقاب کر دیا ہے۔ یہاں ایک پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے ا?رادھنا نے کہا کہ بی جے پی کے تمام لیڈران اور وزیر اعظم خود بھی بار بار اس بات کا اظہار کرنے سے نہیں گھبراتے کہ انہوں نے کورونا کے دور میں کس طرح مفت راشن تقسیم کیا لیکن حقیقت یہ ہے کہ عوام کو 2 وقت کی روٹی انتخابات کو مدنظر رکھ کر دی گئی اور اب جب انتخابات گزر گئے تو پھر عوام کے پیٹ پر لات مارنے کی تیاریاں بھی مکمل کر لی گئی ہیں۔

The short URL of the present article is: http://harpal.in/p1EHU

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا. ضرورت کے خانے پر* نشان لگا دیا گیا ہے

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.